ⓘ Free online encyclopedia. Did you know? page 256



                                               

محاصرہ قسطنطنیہ 717ء تا 718ء

عرب محاصرہ قسطنطنیہ 717ء تا 718ء، امیہ خلافت کے عربوں کی طرف سے زمین اور سمندر کے ذریعے بازنطینی سلطنت کے دار الحکومت قسطنطنیہ کو لینے کے لیے ایک مشترکہ کوشش تھی۔ بیس سال کی لگاتار مہم اور بازنطینی سرحدوں پر بتدریج عرب تجاوز و حملوں اور بازنطینی ...

                                               

تبت شناسائی کی یورپی تاریخ

ہمالیہ کے پہاڑوں کی گہرائی میں تبت کے مقام نے تبت کا سفر کسی بھی وقت غیر معمولی مشکل بنا دیا تھا ، اس کے علاوہ یہ بھی روایتی طور پر تمام مغربی غیر ملکیوں کے لئے ممنوع تھا۔ تبت ، چین ، بھوٹان ، آسام اور شمالی ہندوستان کی ریاستوں کی داخلی اور خارجی ...

                                               

تبت میں یورپی سیاح

تبت میں یورپی سیاح بہت کم تعداد میں آئے ہیں کیونکہ سلسلہ کوہ ہمالیہ کی گہری وادی میں ہونے کی وجہ سے تبت کا سفر کرنا انتہائی دشوار کام تھا مزید یہ کہ مغربی آبادی کو اس وادی میں آنا سخت منع تھا۔ تبت، چین، بھوٹان، آسام اور شمالی بھارت کی سلطنتوں اور ...

                                               

تاریخ سلطنت عثمانیہ

سلطنت عثمانیہ عثمان اول نے بطور بیلیک کے شمال مغربی ایشیائے صغری میں، بازنطینی دارالحکومت قسطنطنیہ کے ٹھیک جنوب میں قائم کی۔ عثمانیوں نے 1352ء میں پہلی بار یورپ کو عبور کیا، 1354ء میں در دانیال میں قلعہ جنبی میں مستقل نو آبادی کی بنیاد رکھی اور ا ...

                                               

خدائے نامہ

خدائے نامہ ، وسطی فارسی تاریخ کا متن تھا جو ساسانیائی دور کا تھا ، جسے اب تھیوڈور نیلڈیک نے سوسنی سلطنت کی فارسی زبان کی تمام تاریخی تاریخوں کا مشترکہ اجداد سمجھا تھا ، ایک خیال ہے۔ نامنظور کیا گیا ہے سمجھا جاتا تھا کہ اس کا عربی زبان میں ترجمہ ا ...

                                               

بین جنگ دور

20 ویں صدی کی تاریخ کے تناظر میں ، بین جنگ یا انٹر وار کا دورانیہ 11 نومبر 1918 کو پہلی عالمی جنگ کے اختتام اور یکم ستمبر 1939 کو دوسری عالمی جنگ کے آغاز کے درمیان کا دور تھا۔ اس مدت کو بول چال کے دوران جنگوں کے درمیان بھی کہا جاتا ہے۔ نسبتا مختص ...

                                               

کوریا جاپانی تسلط میں

سلطنت روس اور شہنشاہی جاپان کے مابین جنگ میں جاپان کی فتح کے بعد کوریا جاپانی تسلط میں آگیا۔ قلیل مدتی ریاست کوریا پر جاپان کا یہ تسلط 1910ء میں شروع ہوکر 1945ء میں دوسری جنگ عظیم کے منتج ہونے پر ختم ہوا۔اس عرصے کے دوران میں کوریا اور اس کے لوگ ج ...

                                               

برج غلطہ

برج غلاطہ جسے بازنطینی "برج مسیح" اور "برج عظیم" بھی کہا کرتے تھے، استنبول، ترکی میں شاخ زریں کے نزدیک واقع ایک مینار ہے۔ یہ شہر کے قدیم علاقے غلطہ کے اہم آثار قدیمہ میں سے ایک ہے۔ یہ مینار 1348ء میں جینووا کے قابضین نے بنام "برج مسیح" تعمیر کیا ...

                                               

ہیوسٹن-شوگر لینڈ-بیٹن

ہیوسٹن-شوگر لینڈ-بیٹن شہری علاقہ ریاست ہائے متحدہ امریکہ کا چھٹا سب سے بڑا علاقہ ہے جو 10 کاؤنٹیز پر مشتمل ہے۔ یہ ملک کے تیز ترین ترقی کرنے والے علاقوں میں سے ایک ہے۔ 1990ء سے 2000ء تک اس علاقے کی آبادی میں 25،2 فی صد اضافہ ہوا ہے جب کہ ملک کی آب ...

                                               

ابن الصفار

ابو القاسم احمد بن عبد اللہ بن عمر القرطبی ، پانچویں صدی ہجری میں اندلس کے ایک ریاضی دان تھے، ابی القاسم المجریطی کے شاگردوں میں سے ہیں، ابن صاعد الاندلسی" طبقات الامم” میں ان کے بارے میں لکھتے ہیں:" وہ علمِ اعداد، ہندسہ اور نجوم کے محقق تھے، قرط ...

                                               

ابن الہائم

ابو عباس شہاب الدين احمد بن عماد الدین بن علی المعروف ابن الہائم قرون وسطیٰ کے مسلمان ماہر فلکیات اور ریاضی جن کا تعلق اشبیلیہ، اندلس سے تھا۔ مصر میں 753ھ کو پیدا ہوئے اور وہیں پر 815ھ کو وفات پائی، ریاضی دان اور فقیہ تھے۔ قیمتی تصانیف چھوڑیں جن ...

                                               

ابن سیدہ

ابو الحسن علی ابن سیدہ کے نام سے جانے جاتے ہیں، ان کے والد کے نام پر مؤرخوں میں اختلاف پایا جاتا ہے،" الصلہ” میں ابن بشکوال نے ان کے والد کا نام اسماعیل بتایا ہے جبکہ الفتح بن خاقان نے" مطمح الانفس” میں احمد لکھا ہے، یہی بات" الحممیدی” یاقوت کی" ...

                                               

ابو عبد اللہ

ابو عبد اللہ امارت غرناطہ یعنی بنو نصر کا آخری فرمانروا تھا جو اندلس میں مسلمانوں کی آخری حکومت تھی۔ وہ طائفہ غرناطہ کے حکمران مولائے ابو الحسن کا بیٹا تھا۔ ابو عبد اللہ ایک غدار تھا، اس كا استاد ابو داؤد ایک منافق تھا وہ غیر مسلموں كى مدد كرتا ت ...

                                               

الرشاطی

الرشاطی ، پورا نام ابو محمد عبد ﷲ بن خلف بن احمد بن عمر الرشاطی ہے۔ عمر الرشاطی متوطن المریہ نہایت ذی مرتبہ محدث اور مورخ گزار ہے۔ عمر الرشاطی علمائے اندس میں سے ایک ہے۔ عمر الرشاطی نے اپنی کتاب اقتباس الانوار والتماس الازہار میں صرف ان لوگوں کا ...

                                               

المجریطی

المجریطی کا نام ابو القاسم مسلمہ بن احمد ہے، اندلس کے شہر مجریط میں 340 ہجری کو پیدا ہوئے اور اسی سے منسوب ہوکر" المجریطی” کہلائے، ریاضی دان تھے اور اندلس میں ریاضی دانوں کے امام کہلاتے تھے، علمِ فلک پر بھی ان کے مواقف اور آراء ہیں، کیمیا اور دیگ ...

                                               

افضل بیابانی

حافظ سید شاہ افضل بیابانی آندھراپردیش سے تعلق رکھنے والے ہندوستان کے مشہور رفاعی سلسلہ کے عظیم صوفی بزرگ اور فارسی، اردو اور تلگو کے شاعر تھے۔ وہ 1210ھ کو قاضی پیٹ، ریاست حیدرآباد میں پیدا ہوئے۔ ان کے والد سید شاہ غلام محی الدین بیابانی بھی نامور ...

                                               

اکبر حیدری

سر محمد اکبر نذر علی حیدری صدر المہام ایک ہندوستانی سیاست دان تھے۔ سر اکبر حیدری 18 مارچ سنہ 1937ء سے ستمبر 1941ء تک ریاست حیدرآباد کے صدر المہام رہے۔

                                               

بھاگ متی

بھاگ متی سلطان محمد قلی قطب شاہ کی ملکہ تھیں جسے بعض مورخین افسانہ قرار دیتے ہیں۔ بھاگ متی ایک رقاصہ تھیں اور سلطان اس کے عشق میں گرفتار ہو گیا تھا۔ بعد ازاں بھاگ متی نے اسلام قبول کیا اور سلطان قلی قطب شاہ کی نکاح میں آئیں۔ شہر حیدرآباد کے تسمیہ ...

                                               

جامی حیدرآبادی

جامی 15 مئی 1915ء کو حیدرآباد دکن میں پیدا ہوئے۔جامی کا اصل نام خورشید احمد تھا۔ اُن کا خاندان حیدرآباد دکن کا علمی گھرانہ شمار ہوتا تھا۔ یہ خاندان پربھنی مہاراشٹر میں آباد تھا جہاں سے اُن کے نانا قاضی صدیق احمد تخلیص فہیم، نقل مکانی کرکے حیدرآبا ...

                                               

زبیدہ یزدانی

زبیدہ یزدانی ایک ہندوستانی مورخ تھی جو ہندوستان میں دکن کی تاریخ میں مہارت رکھتی تھی۔ وہ ایک پیشہ ور مورخ تھیں ، یہ ایک ایسا مضمون تھا جسے انہوں نے آکسفورڈ میں پڑھا تھا اور جس میں انہوں نے ہندوستان میں کچھ 30 سال تک لیکچر دیا تھا۔ وہ آکسفورڈ یونی ...

                                               

سمیع الدینی خاندان

سمیع الدینی خاندان ایک موجودہ علوی-انصاری نسل کا سنی-حنفی مسلمان خاندان ہے، اس خاندان کے مادری بزرگ حضرت ابو ایوب انصاری کی نسل سے تھے اور اتر پردیش سے تعلق رکھتے تھے، جبکہ دادیالی بزرگ حضرت علی ابن ابو طالب کی نسل سے تھے اور حیدرآباد دکن اور بہا ...

                                               

سید علی بلگرامی

شمس العلماء ڈاکٹر سید علی بلگرامی ریاست حیدرآباد سے تعلق رکھنے والے اردو زبان کے نامور مصنف، محقق، مترجم اور جامعہ کیمبرج میں مرہٹی زبان کے پروفیسر تھے۔ انہوں نے کیننگ کالج لکھنؤ، پٹنہ کالج، روڑکی انجینئرنگ کالج اور جامعہ لندن سے تعلیم پائی۔ نصف ...

                                               

سید محمد احسن

وائس ایڈمرل سید محمد احسن پاک بحریہ کے چوتھے سربراہ سید محمد ایس ایم احسن 21 دسمبر 1920ء کو حیدرآباد دکن میں پیدا ہوئے تھے۔ انہوں نے 1940ء میں رائل انڈین نیوی میں کمیشن حاصل کیا تھا اور دوسری عالمی جنگ کے دوران کئی اہم لڑائیوں میں حصہ لیا تھا۔ قی ...

                                               

سید محمد ہادی

سید محمدہادی 12اگست آندھیرا پردیش حیدرآباد, بھارت کے سب سے زیادہ مشہور کھلاڑیوں میں سے ایک تھے۔ انہوں نے نہ صرف کرکٹ اور ٹینس میں بھارت کی نمائندگی کی بلکہ ہاکی, فٹ بال, ٹیبل ٹینس, شطرنج اور پولو کے میدان بھی مارے. ان سات کھیلوں میں ان کی مہارت ک ...

                                               

سیف الرحمن گرامی

سیف الرحمٰن گرامی پاکستان سے تعلق رکھنے والے معروف سماجی شخصیت اور سرکاری افسر تھے، پاکستان میں عالمی مشاعروں کے بانیوں میں شمار ہوتے تھے۔ بلدیہ عظمی کراچی میں ڈائریکٹر انفارمیشن، ڈائریکٹر کلچر اینڈ اسپورٹس، آرٹس کونسل آف پاکستان کراچی کے سیکریٹر ...

                                               

شہزادی در شہوار

بیگم صاحبہ خدیجہ خیریہ عائشہ در شہوار سلطان المعروف شہزادی در شہوار آخری خلیفۃ المسلمین عبد المجید ثانی کی صاحبزادی تھیں۔ وہ جس وقت پیدا ہوئیں اس وقت سلطنت عثمانیہ اپنے آخری ایام گن رہی تھی۔ 1924ء میں خلافت کے خاتمے کے بعد ان کے والد عبد المجید ث ...

                                               

غازی الدین خان فیروز جنگ اول

میر شہاب الدین صدیقی لقب فرزند ارجمند نواب غازی الدین خان صدیقی بےآفندی بہادر، فیروز جنگ آئی، سپہ سالار خلیچ خان خواجہ عابد خان صدیقی بے آفندی کا بیٹا تھا جو مغل شہنشاہ جہانگیر کا صدر آس صدور تھا۔ جو پہلے عہدہ میں امیر تھا اور ابتدائی لقب غازی ال ...

                                               

غلام یزدانی (ماہر آثار قدیمہ)

ڈاکٹر غلام یزدانی کی شہرت کا اصل سبب بھارت کی ریاست کارناٹک کے بیدر شہر کی چھ سو سالہ قدیم تاریخی عمارتوں کی بازتعمیر ہے۔ حالانکہ ان کی ولادت مارچ 22، 1885 کو دہلی میں ہوئی تھی، تاہم ان کے تعمیری کارنامے جنوبی ہند اور مہاراشٹر سے جڑے ہیں۔

                                               

فضل نواز جنگ

نواب فضل جنگ بہادر ایک حیدرآبادی سیاست دان اور سرمایہ کار ، جو نظام آف حیدرآباد میر عثمان علی خان آصف جاہ ہفتم کے دور کے تھے۔ سید فضل اللہ حیدرآباد بھارت میں ایک قدیم معزز عرب گھرانہ میں پیدا ہوئے۔ ان کے آباؤ اجداد اپنا سلسلہ نسب محمد صلی اللہ عل ...

                                               

قدیر الدین احمد

قدیر الدین احمد پاکستانی سابق جج تھے جو مشرقی پاکستان کے سپریم کورٹ اور سندھ ہائی کورٹ کے چیف جسٹس اور صوبہ سندھ کے گورنر بھی رہے تھے۔

                                               

لیڈی حیدری کلب

لیڈی حیدری کلب سابق نوابی ریاست حیدر آباد میں خواتین کے لیے مخصوص رؤسا کا کلب تھا۔ یہ بشیر باغ علاقے میں موجودہ طور پر گاندھی میڈیکل کالج کی عمارت میں واقع تھا۔

                                               

محمد حمید اللہ

ڈاکٹر محمد حمید اللہ معروف محدث، فقیہ، محقق، قانون دان اور اسلامی دانشور تھے اور بین الاقوامی قوانین کے ماہر سمجھے جاتے تھے۔ تاریخ حدیث پر اعلیٰ تحقیق، فرانسیسی میں ترجمہ قرآن اور مغرب کے قلب میں ترویج اسلام کا اہم فریضہ نبھانے پر آپ کو عالمگیر ش ...

                                               

مرزا محمد اسماعیل

سر مرزا محمد اسماعیل امین المولک ، ایک دیوان تھے۔ جو ریاست میسور، حیدرآباد اور جے پور کے وزیر اعظم تھے۔ سر چھتپٹ پتابھراما راموسمی لیر ،دیوان تراونکور اسے بھارت کا سب سے چالاک انسان کے طور پر بیان کرتا ہے۔ بہت لمبے عرصے کے دوست سر چندراسکھارا وین ...

                                               

مہاراجہ سر کشن پرشاد

مہاراجا پیشکار سر کشن پرشاد بہادر یمین السلطنت، جی سی آئی ای ریاست حیدرآباد کے دو بار صدر المہام رہے۔ پہلی مرتبہ 1901ء سے 1912ء تک اور دوسری مرتبہ 1926ء سے 1937ء تک صدر المہام رہے۔ مہاراجا کے بعد سر وقار الامرا صدر المہام مقرر ہوئے۔

                                               

میر یوسف علی خان، سالار جنگ سوم

نواب ابو القاسم اویسی میر یوسف علی خان سالار جنگ سوم جو سالار جنگ سوم کے طور پر مشہور تھے اور تین پیگاہ کے بعد چوتھے حاکم تھے۔ سالار جنگ کا گھرانا اس کے والد کی طرف سے پانچ نسلوں سے وزیر اعظم کی خدمات سر انجام دے رہا تھا بشمول نواب میر عالم بہادر ...

                                               

نواب آسمان جاہ بہادر

پائیگاہ امیر ایچ-ای نواب سر آسمان جاہ بہادر 23 فروری 1840ء کو پیدا ہوئے۔ وہ پائیگاہ خاندان کے معزز فرد اور ریاست حیدرآباد کے 1887ء سے 1894ء تک وزیر اعظم تھے۔ نواب سر آسمان جاہ کا پورا نام اور لقب نواب محمد مظہر الدین خان بہادر، رفعت جنگ، بشیر الد ...

                                               

نواب بہادر یار جنگ

نواب بہادر یار جنگ ، پیدائش: 1905ء، وفات: 1944ء تحریکِ پاکستان میں مسلمانوں کے ایک رہنماء تھے۔ حیدر آباد دکن میں پیداہوئے۔ نسلاً نورزئی پٹھان تھے۔ والد نواب نصیر یار جنگ جاگیردار تھے۔ بیس بائس سال کی عمر میں سماجی بہبود کے کاموں میں حصہ لینا شروع ...

                                               

نواب وقار الملک

نواب وقار الملک جنکا اصل نام مشتاق حسین زبیری تھا مسلم لیگ کے ابتدائی اراکین میں سے تھے جنھوں نے اس جماعت کی بنیاد رکھی تھی نیز وہ ایک معروف ریاضی دان سر ضیاء الدین احمد زبیری جو علی گڑھ تحریک کے سرخیل تھے کے ماموں بھی تھے۔ نیز وہ ایک مسلم مصلح، ...

                                               

ضرار بن ازور

ضرار اپنے قبیلہ کے اصحاب ثروت میں تھے، عرب میں سب سے بڑی دولت اونٹ کے گلے تھے، ضرار کے پاس ہزار اونٹوں کا گلہ تھا، اسلام کے جذب وولولے میں تمام مال ودولت چھوڑ کر خالی ہاتھ آستانِ نبوی پر پہنچے قبول اسلام کے بعد آنحضرتﷺ نے بنی صید اوربنی ہذیل کی ط ...

                                               

عبادہ بن صامت

عبادہ نام، ابو الولید کنیت، قبیلۂ خزرج کے خاندان سالم سے ہیں نسب نامہ یہ ہے ،عبادہ بن صامت بن قیس بن اصرم بن فہر بن قیس بن ثعلبہ بن غنم قوقل بن سالم بن عوف بن عمرو بن عوف بن خزرج ،والدہ کا نام قرۃ العین تھا، جو عبادہ بن نضلہ بن مالک بن عجلان کی ب ...

                                               

مقداد بن اسود

مقداد بن اسود الکندی محمد صلی اللہ علیہ و آلہ و سلم کے اصحاب میں سے تھے۔ ان کا شجرہ یوں ہے: مقداد بن عمرو بن ثعلبہ بن مالک بن ربیعہ بن عامر ۔ ان کا تعلق قبیلہ کندہ سے تھا جو نواحِ یمن میں حضرموت میں رہتے تھے۔ مقداد اپنے قبیلہ سے نکل کر مکہ میں رہ ...

                                               

ابن ملجم

کچھ روایات کے مطابق جنگ نہروان کی شکست کے بعد متعدد خارجیوں نے مکہ مکرمہ میں ملاقات کی اور 40ھ کی جنگ نہروان پر تبادلہ خیال کیا جس میں خارجیوں کے سیکڑوں ساتھی علی کی فوج سے علیحدگی کے بعد علی کی افواج کے ہاتھوں مارے گئے۔ صرف 9 آدمی خوارج کے زندہ ...

                                               

اشعث بن قیس

اشعث ابن قیس کندی کا اصل نام معد یکرب تھا مگر اپنے بالوں کی پراگندگی کی وجہ سے اشعث مشہور ہوا۔ فتح مکہ سے کچھ پہلے اسلام قبول کیا مگر دل سے منافق رہا۔ پیغمبر اسلام کے بعد مرتد ہو گیا اور ابو بکر صدیق کے زمانۂ خلافت میں کہ جب اسے اسیر کر کے مدینہ ...

                                               

زیاد بن ابی سفیان

شروع میں حضرت علی کے معروف حامیوں میں سے تھا اور حضرت علی نے اسے کرمان اور فارس کا گورنر مقرر کیا تھا۔ حضرت علی کے بعد حضرت حسن کے ساتھ منسلک رہے۔ لیکن ان کی دسترداری کے بعد مشرقی علاقوں میں آزاد حکمران بن گیا۔ اس کی اعلیٰ صلاحیتوں کے سبب امیر مع ...

                                               

سلمان بن ربیعہ باہلی

سلمان بن ربیعہ بن یزید بن عمرو باہلی ، باہلی کی نسبت ان کی والدہ باہلہ بنت صعب بن سعد العشیرہ کی طرف ہے۔ کہا جاتا ہے کہ باہلی نسبت باہلہ بن یعصر بن سعد بن قیس بن عیلان کی طرف ہے۔ اسلامی فوج کے قائد اور قاضی تھے۔

                                               

عبید اللہ ابن عمر

عبید اللہ ابن عمر خلفیہ دوم حضرت عمر رضی اللہ کے بیٹے تھے۔ انہوں نے 657 عیسوی میں وفات پائی۔ انہوں نے اپنے والد کے قتل کی سازش میں شرکت کے شک میں ہرمزان کو قتل کردیا۔ خلفیہ سوم حضرت عثمان رضی اللہ عنہ نے ہرمزان کے عرب حمایتیوں جن میں حضرت علی رضی ...

                                               

ابویعلیٰ الموصلی

امام الحافظ، شیخ الاسلام ابویعلیٰ الموصلی محدث، فقیہ تھے۔اُن کی وجہ شہرت اُن کی تالیف حدیث مسند ابویعلیٰ ہے۔

                                               

الواقدی

الواقدی کا مکمل نام ابو عبد اللہ محمد بن عمر بن واقدی الاسلمی ہے، جبکہ عموماً الواقدِی کے نام سے معروف و مشہور ہیں۔ خطیب بغدادی نے مکمل نام یوں لکھا ہے: ابو عبد اللہ محمد بن عمر بن واقد الواقدی المَدینی۔ امام الذھبی نے بھی یہی نام لکھا ہے۔

                                               

بہلول

بہلول یا جنہیں بلول دانا بھی کہتے ہیں واہب بن عمرو کا لقب تھا جو ایک صوفی بزرگ تھے۔ آپ بغداد اور اردگرد کے ویرانوں میں بے فکری اور دنیا سے بے خبر گھومتے رہتے تھے۔ آپ ایک درویش صفت فلسفی تھے۔ وہ امام موسیٰ کاظم کے دوستدار تھے اور خلیفہہارون الرشید ...

                                               

خلیفہ بن خیاط

خلیفہ بن خیاط ایک عرب مورخ ہیں۔ ان کے خاندان کا تعلق بصرہ،عراق سے تھا۔ ان کے دادا ایک معروف محدث تھے۔ ان کے معروف شاگردوں میں امام بخاری، امام حنبل، ابویعلیٰ الموصلی، عبد الرزاق الصنعانی صاحب کتاب المصنف شامل ہیں۔

Free and no ads
no need to download or install

Pino - logical board game which is based on tactics and strategy. In general this is a remix of chess, checkers and corners. The game develops imagination, concentration, teaches how to solve tasks, plan their own actions and of course to think logically. It does not matter how much pieces you have, the main thing is how they are placement!

online intellectual game →