ⓘ Free online encyclopedia. Did you know? page 257



                                               

لطیفی اشاکی

                                               

محمد جمال الدین آفندی

محمد جمال الدین آفندی سلطنت عثمانیہ کے قاضی اور شیخ الاسلام تھے۔ جمال الدین آفندی عثمانی سلطان عبدالحمید ثانی کے عہدِ حکومت میں بطور شیخ الاسلام رہے۔

                                               

محمد زاہد کوثری

محمد زاہد بن حسن حلمی کوثری ، کوثری کی نسبت قفقاز میں دریائے شیز کے کنارے ان کے گاؤں کی طرف ہے، بعض کے مطابق یہ نسبت ان کے اجداد میں سے کسی کی جانب ہے، جو مشہور قدیم قبیلہ "جرکسی" کی شاخ "شابسوغ" سے تھے۔

                                               

مریم بواردی

مقدسہ مریم بواردی کو یسوع مصلوبی کی مریم بھی کہا جاتا ہے۔ وہ ملکی یونانی کاتھولک کلیسیا کی کارملی پابرہنہ سلسلے کی راہبہ تھی۔ سوریہ و لبنان سے تعلق رکھنے والے یونانی کیتھولک والدین کے گھر میں پیدا ہوئی تھی، وہ غربا کی خدمت و مدد کرنے کے لیے جانی ...

                                               

يوسف نبہانی

امام یوسف نبہانی قریہ اجزم فلسطین میں1265ھ بمطابق 1849ءپیدا ہوئے ان کی نسبت نبہان جو موجودہ حیفا کی حدود میں ہےجو فلسطین کا ایک گاؤں ہے کی طرف ہے۔ ایک شاعر ،ادیب اور قاضی رہے ان کی نسبت فلسطین کے ایک گاؤں"اجزم"سے ہے جو عرب کے بادیہ نشین بنو نبہان ...

                                               

ابن ایاس

محمد ابن ایاس مصری تاریخ کے ایک اہم مؤرخ ہیں۔ ابن ایاس مصر پر عثمانی حملے کے چشم دید گواہ تھے۔ ابن ایاس اصل میں ادیگی قوم سے تھے، ان کو اُس دور کے واقعات کے لیے ایک اہم ماخذ کے طور پر تسلیم کیا گیا ہے۔ وہ مملوک میں سے تھے اور اُن کی کتاب بدائع ال ...

                                               

دینا ناتھ

راجا دینا ناتھ یا دیوان دینا ناتھ ایک کشمیری النسل شخص تھا جو خطۂ پنجاب میں سکھ سلطنت کے مہاراجا رنجیت سنگھ کا دیوان بنا۔ دینا ناتھ کا کنواں تاریخ کا حامل ہے،

                                               

لال سنگھ

                                               

شیخ حر عاملی

فهرس وسائل الشيعة سمّاه من لا يحضره الإمام ديوان شعر: يزيد عن 20000 بيت من الشعر. الأخلاق مقتل الحسين عليه السلام العربية العلوية واللغة المروية. الجواهر السنية في الأحاديث القدسية. كتاب الإجازات. ديوان زين العابدين عليه السلام تفصيل وسائل الشيعة ...

                                               

عالم آرای امینی (کتاب)

عالم آرای امینی ایک تاریخی کتاب ہے۔ اس کتاب میں آق قویونلو خاندان کی تاریخ اور صفوی سلطنت کے عروج پر لکھا گیا ہے۔ اس کتاب کو فضل اللہ بن روز بہان خنجی اصفہانی نے 892ھ اور 897ھ کے درمیان فارسی زبان میں لکھا تھا۔ اس کتاب کا انگریزی ترجمہ ولادیمیر م ...

                                               

محمد باقر مجلسی

محمد باقر بن محمد تقی بن المقصود علی المجلسی المعروف علامۂ مجلسی یا مجلسی دوم عالم اسلام کے مشہور ترین علما، فقہا اور محدثین میں سے ہیں۔ وہ صفوی دور کے با اثر شیعہ حکام میں شمار ہوتے تھے اور مشہورِ عالَم کتابِ حدیث بحار الانوار کے مؤلف ہیں۔

                                               

ملا صدرا

صدر الدین محمد بن ابراہیم قوام شیرازی معروف بہ مُلاصَدرا و صدرالمتألہین ،گیارویں صدی ہجری کے معروف ایرانی شیعہ فلاسفر ہیں و فلسفی مکتب حکمت متعالیہ کے بانی ہیں۔ ملا صدرا نے اپنے فلسفہ میں علوم نقلی اور عقلی کے علاوہ علوم کشف وشہود کو بھی بنیاد بن ...

                                               

ملا محسن فیض کاشانی

ملا محمد محسن فیض کاشانی گیارہویں صدی اخباری اہل تشیع عالم، مفسر، محدث ، شاعر، فلسفیاور فقیہ تھے۔ ملا فیض کاشانی نے مختلف موضوعات تفسیر، حدیث، فقہ، اخلاق و عرفان میں تفسیر صافی، الوافی، مفاتیح الشرائع، المحجۃ البیضاء اور الکلمات المکنونہ جیسے آثا ...

                                               

میر عماد حسنی

میر عماد کی پیدائش 1554ء میں قزوین میں ہوئی۔ والد کا نام ابراہیم حسنی سیفی تھا۔ علاقہ قزوین کی نسبت سے قزوینی کہلاتے تھے۔ میر عماد کا خاندان قزوین میں سادات کے مشہور گھرانوں میں سے ایک تھا۔ یہ خاندانِ سادات حضرت حسن ابن علی رضی اللہ عنہ کی نسبت س ...

                                               

سالم مولی ابی حذیفہ

سالم مولیٰ ابی حذیفہ مسجد قباء کے امام تھے، مہاجرین اولین اکثر ان کے پیچھے نمازیں پڑھتے تھے انہیں سالم بن معقل بھی کہا جاتا ہے۔ ان کا شمار فضلاء الموالی،اخیار الصحابہ اور کبار الاصحابہ میں کیا جاتا ہے۔

                                               

آغا خان اول

حسن علی شاہ آغاخان آول 1817ء میں مسندِ امامت پر جلوہ افروز ہوئے۔آپ حسن الحسینی کے نام سے بھی یاد کیے جاتے ہیں۔اور آغاخان آوّل کے نام سے بھی آغاخان آپ کا لقب تھا۔۔آپ کی ابتدائی زندگی کے متعلق تھوڑی سی معلومات ملتی ہیں۔مثلاً آپ کی پیدائش 1800ء میں ...

                                               

اسماعیل صفوی

شہنشاہ ایران ، صفوی خاندان کا بانی۔ 1502ء میں تخت نشین ہوا۔ عربوں کے اقتدار کے بعد پہلی بار ایران آزادانہ حیثیت دی اور شیعیت کو ملکی مذہب قرار دیا۔ ترکی زبان کا صاحب دیوان شاعر بھی تھا، خطائی تخلص رکھتا تھا۔

                                               

سعید نفیسی

ایرانی شاعر و ادیب۔ سعید نفیسی علامہ اقبال کی عظمت کا اعتراف کرتے ہوئے تحریر کرتے ہیں کہ ’’اقبال کی مثنوی موجودہ دور کی مثنوی ہے۔ اقبال کو ایرانی اُسی نظر سے دیکھتے ہیں جس طرح رومی اور حافظ کو دیکھتے ہیں۔ اقبال کا مقام ایک پیشوا اور رہنما کا ہے۔ ...

                                               

سید علی محمد باب

سید علی محمد باب بابی یا بہائی مذہب کا بانی۔ اس کا باپ محمد رضا، شیراز کا تاجر تھا۔ سید علی محمد حصول تعلیم کے لیے کربلا گیا اور پھر شیراز واپس آکر چوبیس سال کی عمر میں ہونے کا دعوی کیا۔ اصفہان کا گورنر منوچہراس کا پیرو بن گیا۔ مرزا یحییٰ نوری جو ...

                                               

صبح ازل

                                               

طاہر بن حسین

طاہر بن حسین خلافت عباسیہ کے دوران ایک ایرانی جنرل اور گورنر تھے۔ اس نے عظیم عباسی خانہ جنگی کے دوران مامون الرشید کے تحت امین الرشید کی افواج کو شکست دی جس کت نتیجے میں مامون الرشید خلیفہ بنے۔ اس کے بعد وہ خراسان کے گورنر بنے اور بعد میں آل طاہر ...

                                               

مامون الرشید

عبد اللہ بن طاہر کا بیان ہے کہ ایک بار مامون کی خدمت میں حاضر تھا۔ اس نے غلام کو آواز دی مگر صدائے برنخاست۔ پھر پکارا تو ایک ترکی غلام حاضر ہوا اور آتے ہی بڑبڑانے لگا کہ کیا غلام کھاتے پیتے نہیں؟ جب ذرا کسی کام کے لیے باہر گئے تو آپ یا غلام یا غل ...

                                               

محمد بن یعقوب الکلینی

ابوجعفر محمد بن يعقوب الکليني ، عباسی بادشاہ المقتدر باللہ کے زمانے کے بزرگ شيعہ فقيہ و عالم دين تھے۔ چونکہ وہ بغداد کے "درب السلسلہ" ميں آبسے تھے اسي وجہ سے انہيں "سلسلی" کا لقب ملا ہے- اور وہ سنہ 327ھ ميں درب السلسلہ ميں اور "صور" ميں نقل حديث ...

                                               

مرزا عباس نوری

مرزا عباس نوری یا مرزا بزرگ بہائیت کے بانی بہاء اللہ اور صبح ازل کا والد تھا۔ وہ فارسی صوبے نور کا امیرزادہ تھا۔ وہ فتح علی شاہ قاجار کے دربار کا ملازم تھا۔

                                               

مہ لقا جام بزرگ

مہ لقا جام بزرگ ایک ایرانی خاتون شوٹر ہے جس نے ٹیم ایئر رائفل میں گوانگ ژو ایشین گیمز میں 10 میٹر میں چاندی کا تمغہ جیتا تھا اور 50 میٹر کے مقابلوں میں تین کانسی کے تمغے جیتے تھے۔

                                               

یعقوب لیث صفاری

یعقوب لیث صفاری یا یعقوب بن اللیث بن الصفار ایک فارسی النسل کسیرا جو سیستان کی صفاری سلطنت کے بانی تھے۔ اپنے عہد میں انہوں نے عظیم تر فارس کا زیادہ تر حصہ فتح کیا، جو موجودہ ایران، افغانستان، ازبکستان، پاکستان کے مغربی علاقے، ترکمانستان، تاجکستان ...

                                               

الکبیدش

الکبیدش بن کالیناس c. 450 – 404 قبل مسیح ایک ممتاز اتینیان سیاستدان، خطیب اور جنرل گزرا ہے۔ اپنی ماں کی طرف کے اشرافی خاندان کا آخری مشہورشخص، Alcmaeonidae جوپیلوپوناسیہ Peloponnesian جنگ کے بعد گمنام ہو رہی ۔ اس جنگ کے دوسرے حصہ میں الکبیدش نے ب ...

                                               

ایس کلس

Aeschylus پیدائش: 525 ق م انتقال: 452 ق م یونان کا عظیم شاعر اور ڈراما نگار جسے بابائےالمیہ کہا جاتا ہے۔ ایتھنز میں پیدا ہوا۔ میراتھن جنگ اور سلامینز کی مشہور جنگوں میں شریک ہوا۔ سوفوکلیز کا ہمعصر اور حریف تھا۔ تقریبا 90 ڈرامے لکھے لیکن صرف سات م ...

                                               

اینٹی شینز

Dudley, Donald R. 1937, A History of Cynicism from Diogenes to the 6th Century A.D. Cambridge Luis E. Navia, 2005, Diogenes The Cynic: The War Against The World. Humanity Books. ISBN 1-59102-320-3 Brancacci, Aldo. Oikeios logos. La filosofia del ...

                                               

سوفوکلیز

سوفوکلیز ایک قدیم یونانی مصنف تھا۔ وہ اِن تین قدیم یونانی مصنفوں میں سے ایک ہے جس کی تحریریں بچ گئی ہیں۔ اُس نے اپنی زندگی میں 120 سے زیادہ ڈرامے لکھے مگر صرف 7 ڈرامے مکمل صورت میں ہم تک پہنچے ہیں۔ اڈیپس اُس کے مشہور المیہ ڈراموں میں سے ایک ہے۔ ا ...

                                               

سیپٹیمیوس سیورس

سیپٹیمیوس سیورس ایک رومی شہنشاہ تھا جس کا دور حکومت 193ء سے "211ءپپ تک تھا۔ وہ افریقا کے رومی صوبے لبدہ کبری میں پیدا ہوا۔

                                               

کنول خور

کنول خور یونانی اساطیر میں مذکور ایک قوم ہے جو کنول کے پھولوں سے ڈھکے ایک جزیرے میں آباد تھی اور جزیرے میں جابجا موجود کنول کے پھول ہی ان کنول خوروں کی اصل غذا تھی جسے کھا کر وہ لوگ مدہوشی کی نیند سو جاتے تھے۔ ٹینی سن اور اوڈیسی کے یہاں اس قوم کا ...

                                               

آدینہ بیگ خان

آدینہ بیگ کی ابتدائی زندگی پردہ اخفا میں ہے جبکہ ابتدائی حالات ایک مجہول الاسم نامعلوم الاسم مصنف کے رسالہ دینا بیک خان سے ملتے ہیں جو اُس کی وفات کے تقریباً 50 سال بعد مرتب ہوا تھا، حالانکہ اِس رسالے میں بیشتر واقعات اور سالوں کا اندراج غلط ہے ل ...

                                               

باجی راؤ دوم

باجی راؤ دوم مرہٹہ سلطنت کے آخری پیشوا تھے جنہوں نے سنہ 1795ء سے 1818ء تک پیشوائی کی۔ انہیں مرہٹہ شرفا اور سرداروں نے کٹھ پتلی حاکم کے طور پر تخت پر بٹھایا تھا۔ ان خود سر سرداروں کی ناز برداری نے انہیں اس حد تک زچ کر دیا کہ وہ پونہ چلے گئے اور وہ ...

                                               

بالاجی وشوناتھ

بالاجی وشوناتھ جو پیشوا بالاجی وشوناتھ کے نام سے معروف ہیں، مرہٹہ سلطنت کے چھٹے اور موروثی پیشواؤں میں پہلے پیشوا ہیں جن کا تعلق ایک چت پاون کوکنستھ برہمن ہندو خاندان سے تھا جسے اٹھارویں صدی عیسوی میں مرہٹہ سلطنت پر خاصا اثر و رسوخ حاصل تھا۔ بالا ...

                                               

بہی روجی پنگلے

بھی روجی پنت پنگلے یا بَھیرَوجی پنت پِنگلے موروپنت تریمبک پنگلے کے چھوٹے بیٹے تھے۔ ان کے والد موروپنت پنگلے شیواجی مہاراج کے پہلے پیشوا تھے۔ جب سنہ 1711ء میں کانہوجی آنگرے ستارا شہر پر حملہ آور ہوا تو بھی روجی کو گرفتار کرکے اپنے ساتھ لے گیا۔ فور ...

                                               

جیجا بائی

جیجا بائی شاہ جی بھوسلے جنہیں بعض اوقات راج ماتا جیجا بائی اور صرف جیجائی بھی کہا جاتا ہے، مرہٹہ سلطنت کے بانی چھترپتی شیواجی مہاراج کی والدہ تھیں۔ جیجا بائی سندھ کھیڑ کے لکھوجی جادھوراؤ کی بیٹی تھیں۔ لکھوجی ایک مغل سردار تھے اور ان کا دعویٰ تھا ...

                                               

راجا رام اول

راجا رام راجے بھونسلے مرہٹہ سلطنت کے بانی، چھترپتی شیواجی کے بیٹے اور سمبھاجی کے سوتیلے بھائی تھے۔ سنہ 1689ء میں مغل شہنشاہ اورنگ زیب عالمگیر کے ہاتھوں اپنے بھائی کی وفات کے بعد راجا رام مرہٹہ سلطنت کے تیسرے چھترپتی بنے۔ ان کا عہد حکومت بہت مختصر ...

                                               

راجا رام دوم، ستارا

راجا رام دوم بھوسلے مرہٹہ سلطنت کے چھٹے چھترپتی تھے۔ انہیں چھترپتی شاہو نے گود لیا تھا۔ دراصل تارابائی نے انہیں اپنا پوتا بنا کر شاہو مہاراج کی خدمت میں پیش کیا اور شاہو کی وفات کے بعد اقتدار حاصل کرنے کے لیے راجا رام کو استعمال کیا، بعد ازاں اپن ...

                                               

رام چندر نیل کنٹھ باوڑیکر

رام چندر نیل کنٹھ باوڑیکر یا رام چندر پنت امتیہ چھترپتی شیواجی کے اشٹ پردھان منڈل میں سے ایک اور وزیر مالیات کے منصب پر 1674ء سے 1680ء تک فائز رہے۔ بعد ازاں وہ چار بادشاہوں سمبھاجی، راجا رام اول، شیواجی دوم اور سمبھاجی دوم کے حکومت پناہ رہے۔ ان ک ...

                                               

رگھوناتھ راؤ

رگھوناتھ راؤ مرہٹہ سلطنت کے مختصر مدت کے لیے پیشوا رہے۔ ان کا عہد پیشوائی سنہ 1773ء سے 74ء تک فقط ایک برس پر محیط ہے۔

                                               

شریپت راؤ پنت پرتیندھی

شری نواس راؤ پرشورام جو شریپت راؤ پرتیندھی اور شریپت راؤ پنت پرتیندھی کے ناموں سے معروف ہیں، مرہٹہ سلطنت کے ایک سالار اور چھترپتی شاہو اول کے "پنت پرتیندھی" تھے۔ انہوں نے چھترپتی شاہو اول کے عہد حکومت میں پرتیندھی کی حیثیت سے اپنے فرائض انجام دیے ...

                                               

شمشیر بہادر اول

شمشیر بہادر اول جنہیں کرشن راؤ بھی کہا جاتا ہے، شمالی ہندوستان میں واقع باندہ کی عملداری میں مرہٹہ نسل کے حکمران تھے۔ شمشیر بہادر باجی راؤ اول اور ان کی دوسری بیوی مستانی کے بطن سے پیدا ہوئے۔ ان کے مذہب پر مؤرخین میں اختلاف ہے۔ بعض مورخین کا خیال ...

                                               

شیواجی

شیواجی بھونسلے ایک ہندوستانی مجاہد بادشاہ اور مرہٹہ قبیلے بھونسلے کے فرد تھے۔ شیواجی نے بیجاپور کی زوال شدہ عادل شاہی سلطنت کے دروں خِطّہ پر مرہٹہ سلطنت قائم کی۔ 1674ء میں رسمی طور پر ان کو رائے گڑھ میں چھترپتی تاج پہنایا گیا۔ اپنی زندگی کے دوران ...

                                               

مادھو راؤ اول

مادھو راؤ اول مرہٹہ سلطنت کے چوتھے پیشوا تھے۔ ان کے دور اقتدار میں مرہٹہ سلطنت پانی پت کی تیسری جنگ کے زخموں سے جانبر ہونے کی کوشش کرتی رہی۔ اس صورت حال کو تاریخ میں "مرہٹوں کی حیات نو" سے تعبیر کیا گیا ہے۔ مادھو راؤ کو مرہٹہ تاریخ کے عظیم پیشواؤ ...

                                               

مادھو راؤ دوم

پیشوا مادھو راؤ دوم جنہیں سوائے مادھو راؤ پیشوا اور مادھو راؤ دوم ناراین بھی کہا جاتا ہے، ہندوستان کی مرہٹہ سلطنت کے پیشوا تھے۔ ان کے والد ناراین راؤ پیشوا تھے جنہیں رگھوناتھ راؤ کے حکم پر سنہ 1773ء میں قتل کر دیا گیا تھا۔ مادھو راؤ کی پیدائش اپن ...

                                               

موروپنت تریمبک پنگلے

موروپنت سنہ 1620ء میں نیم گاؤں کے ایک دیشستھ برہمن خاندان میں پیدا ہوئے۔ سنہ 1647ء میں مرہٹہ سلطنت کے قیام کی غرض سے وہ شیواجی کے ساتھ ہو گئے۔ وہ ان سپاہیوں میں شامل تھے جنہوں نے 1659ء کی کامیاب جنگ میں شرکت کی تھی۔ یہ جنگ بیجاپور کے عادل شاہ سے ...

                                               

موریشور پنگلے

نیل کنٹھ موریشور پنگلے یا موریشور پنگلے سنہ 1683ء سے 1689ء تک چھ برس مرہٹہ سلطنت کے پیشوا رہے۔ موریشور موروپنت تریمبک پنگلے کے بیٹے اور بھی روجی پنگلے کے بڑے بھائی تھے۔ سنہ 1689ء میں نیل کنٹھ موریشور بھی مرہٹہ حکمران سمبھاجی کے ساتھ قتل کر دیے گئے۔

                                               

ناراین راؤ

ناراین راؤ نومبر 1772ء سے اگست 1773ء میں اپنے قتل تک مرہٹہ سلطنت کے پانچویں پیشوا اور عملاً حکمران رہے۔ گنگابائی ساٹھے سے ان کا بیاہ ہوا جس کے بطن سے سوائی مادھو راؤ پیشوا پیدا ہوئے۔

                                               

پرشورام تریمبک کلکرنی

پرشورام تریمبک کلکرنی جو پرشورام پنت پرتی ندھی کے نام سے معروف ہیں، مرہٹہ سلطنت کے ایک پردھان اور سردار تھے۔ چھترپتی راجا رام اول اور تارابائی کے دور حکومت میں پرشورام سلطنت کے نمائندہ کے منصب پر فائز رہے۔ ستائیس سالہ جنگ میں ان کا تعاون اور کردا ...

Free and no ads
no need to download or install

Pino - logical board game which is based on tactics and strategy. In general this is a remix of chess, checkers and corners. The game develops imagination, concentration, teaches how to solve tasks, plan their own actions and of course to think logically. It does not matter how much pieces you have, the main thing is how they are placement!

online intellectual game →