ⓘ Free online encyclopedia. Did you know? page 373



                                               

شاہ جہاں

شہاب الدین محمد شاہ جہاں اول یا مرزا شہاب الدین بیگ محمد خان خرم پیدائش: 5 جنوری 1592ء - وفات: 22 جنوری 1666ء سلطنت مغلیہ کا پانچواں شہنشاہ تھا جس نے 1628ء سے 1658ء تک حکومت کی۔ شاہ جہاں کا عہد مغلیہ سلطنت کے عروج کا دَور تھا اور اِس دور کو عہدِ ...

                                               

کلیم اللہ جہان آبادی

اسم گرامی:شاہ کلیم اللہ شاہ جہاں آبادی۔لقب:شیخ المشائخ،عالم و عارف،محدثِ کامل،مجدد سلسلہ عالیہ چشتیہ نظامیہ۔ سلسلہ ٔنسب: شاہ کلیم اللہ شاہ جہاں آبادی بن حاجی نور اللہ صدیقی بن شیخ احمد صدیقی۔ ۔آپ صدیقِ اکبر کی اولاد سےتھے۔آپ کے دادا عہد ِشاہجہانی ...

                                               

جامع مسجد، فتح پور سیکری

جامع مسجد بھارت میں فتح پور سیکری کے عالمی ثقافتی ورثہ میں شامل 17ویں صدی کی ایک مسجد ہے۔ مغل شہنشاہ اکبر نے ذاتی طور پر جامع مسجد کی عمارت تعمیر کرنے کی ہدایت کی ، اس مسجد کی لمبائی تقریبا 540 فٹ ہے۔ اس مسجد کو "جمعہ مسجد" کے نام سے بھی جانا جات ...

                                               

شیخ سلیم چشتی

شیخ سلیم چشتی پیدائش: 1478ء - وفات: اپریل 1572ء ہندوستان میں سلسلہ چشتیہ کے عظیم و جلیل القدر بزرگ تھے۔ سلطنت مغلیہ کے اولین شاہانِ مغلیہ میں اکبر، جہانگیر کو اُن سے عقیدت تھی۔ اُن کی وجہ شہرت سولہویں صدی عیسوی میں سلسلہ چشتیہ سمیت دیگر سلاسل ہائ ...

                                               

تخت جہانگیر

تخت جہانگیر مغل شہنشاہ جہانگیر نے 1602 میں تعمیر کیا تھا اور آگرہ کے لال قلعے میں دیوانِ خاص میں واقع ہے۔

                                               

جہانگیری محل

جہانگیری محل ، قلعہ آگرہ کے اندر تعمیر کی جانے والی سب سے مشہور عمارت ہے۔ یہ محل قلعہ میں زنان خانہ یعنی کہ مغلیہ شاہی خواتین کے رہنے کے لیے مخصوص محل تھا، جو مغل سلاطین کی راجپوت بیویوں کے زیر استعمال رہا۔

                                               

مثمن برج (قلعہ آگرہ)

مسمن برج جس کو سمن برج یا شاہ برج کے نام سے بھی جانا جاتا ہے، آگرہ قلعے میں شاہ جہاں کے نجی دیوانِ خاص کے قریب کھڑا ہوا ایک ہشت پہلو ٹاور ہے۔ مسمن برج آگرہ کے قلب میں واقع ہے۔ یہ ایک خوبصورت اور پرکشش برج ہے جو اس محبت اور امن کو ظاہر کرتا ہے جو ...

                                               

موتی مسجد (آگرہ قلعہ)

موتی مسجد آگرہ میں شاہ جہاں نے تعمیر کی تھی۔ شاہ جہاں مغل بادشاہ کے دور حکومت میں متعدد تعمیراتی عجوبہ تعمیر کیے گئے تھے ، ان میں سب سے مشہور تاج محل تھا۔ موتی مسجد موتی کی طرح چمکنے کی وجہ سے موتی مسجد کے نام سے مشہور ہوئی۔ خیال کیا جاتا ہے کہ ی ...

                                               

مینا مسجد

مینا مسجد یا آسمانی مسجد شاہ جہاں نے 1631-40 کے درمیان آگرہ قلعہ میں دیوان خاص کے قریب تعمیر کی تھی۔ یہ چھوٹی مسجد مغل بادشاہ شاہ جہاں نے اپنے ذاتی استعمال کے لیے بنوائی تھی، یہ مسجد مکمل طور پر سفید سنگ مرمر سے بنی تھی۔

                                               

نگینہ مسجد

نگینہ مسجد آگرہ قلعے بھارت میں ایک مسجد ہے جسے مغلیہ حکمران شاہ جہاں نے اپنے دور حکمرانی میں تعمیر کیا تھا۔ اسے منی مسجد یا جیول مسجد کے نام سے بھی جانا جاتا ہے۔

                                               

خاص محل (لال قلعہ)

                                               

سنہری مسجد (لال قلعہ)

                                               

شاہی برج (لال قلعہ)

                                               

لال قلعہ پر حملہ، 2000ء

سنہ 2001ء میں پاکستان کی عسکریت پسند تنظیم لشکر طیبہ کے دو ارکان نے لال قلعہ پر حملہ کر دیا جس میں درجن بھر بھارتی فوجی ہلاک ہوئے اور حملہ آور قلعہ کی فصیل پھلانگ کر فرار ہو گئے۔ اس کے بعد دسمبر 2003ء میں اس قلعے کو مکمل طور پر فوج نے خالی کر کے ...

                                               

لال قلعہ کا عجائب خانہ

لال قلعہ کا عجائب خانہ یا لال قلعے کا آثاریاتی عجائب خانہ اس وقت قلعے کے اندر ممتاز محل میں واقع ہے۔ اس عجائب خانہ میں مغل عہد کے ثقافتی کاریگری کے نمونے، خطاطی ، مصوری، پارچہ بافی اور دیگر فنون کے شاہکار رکھے گئے ہیں۔

                                               

موتی مسجد (لال قلعہ)

یہ مسجد مغل شہنشاہ اورنگزیب عالمگیر کے حکم سے تعمیر کی گئی۔ 1659ء میں اِس کا سنگ بنیاد رکھا گیا اور تقریباً 2 سال کی مدت میں 1660ء کے اواخر میں تکمیل کو پہنچی۔ یہ مسجد مغل شہنشاہ اورنگزیب عالمگیر نے مغل خاندان کی خاطر تعمیر کروائی، وہ خود بھی اور ...

                                               

نوبت خانہ (لال قلعہ)

نوبت خانہ لال قلعہ کی تعمیر میں بنایا گیا تھا جس کا اہم مقصد اُن سازندوں کو جگہ فراہم کرنا تھا جو مغل شہنشاہ کی آمدورفت کی اطلاع قلعہ کے باشندوں کو کرسکیں یا اُس وقت سازندے نوبت بجاتے تھے جب مغل شہنشاہ کسی اہم مسئلہ درپیش ہونے کی خاطر یہاں آتا۔ ن ...

                                               

ہیرا محل (لال قلعہ)

لاہور کے شالامار باغ میں واقع دو چھوٹی بارہ دریوں سے اِس کی شباہت بہت زیادہ ہے۔ خام عمارت سادہ خشتی سنگ سرخ کی ہے جبکہ اُس کے اوپر سنگ مرمر سفیر چڑھایا گیا ہے جس کی نسبت سے یہ ہیرا محل کہلاتا ہے۔ عمارت مربع نما ہے، چہار جانب تین محرابی دروازے ہیں ...

                                               

اوگاساوارا، ٹوکیو

"Ogasawara subtropical moist forests". Terrestrial Ecoregions. World Wildlife Fund. The Bonin Ogasawara Islands Language and Culture Site بذریعہ وے بیک مشین آرکائیو شدہ ستمبر 29, 2011 Ogasawara-mura maps/photosآرکائیو شدہ بذریعہ tourism.metro.tok ...

                                               

عین شمس

عین شمس مرکزی قاہرہ سے چند کلومیٹر دور شمال مشرق میں واقع مقام ہے جہاں دریائے نیل کا ڈیلٹائی علاقہ شروع ہوتا ہے۔ یہ دریائے نیل سے 5 کلومیٹر دور مشرق میں واقع ہے۔ اس کے یونانی نام یعنی ہیلیوپولس کا مطلب ہے "سورج کا شہر" کیونکہ یہاں سورج دیوتا کا م ...

                                               

انمول موتی (ناول)

انمول موتی ایک امریکی انشا پرداز جان اسٹینبک کا مختصر مگر شہرہ آفاق ناول ہے جو 1947ء میں شائع ہوا۔ اس ناول کا مرکزی کردار موتی کا ایک غوطہ خور ہے جسے کینو کہا جاتا ہے۔ اس ناول میں مصنف نے انسان کی فطرت و طبیعت اور اس میں موجود طمع اور شر کے اسرار ...

                                               

لا پاز، باخا کیلیفورنیا سر

لا پاز میکسیکو کی ریاست باخا کیلیفورنیا سر کا دارالحکومت اور ایک اہم علاقائی تجارتی مرکز ہے۔ 2010 کی مردم شماری کے مطابق شہر کی آبادی 215178 نفوس پر مشتمل ہے، لیکن اس کی میٹروپولیٹن آبادی ارد گرد کے قصبات کی وجہ سے کسی حد تک زیادہ ہے۔

                                               

جنشانلنگ

جنشانلنگ دیوار چین کا ایک حصہ ہے جو بیجنگ سے 125 کلومیٹر دور شمال مشرق میں لوانپنگ کاؤنٹی کے پہاڑی علاقے میں واقع ہے۔

                                               

دیوار عظیم کا دفاع

عظیم دیوار کا دفاع جمہوریہ چین کی فوج اور جاپان کی سلطنت کے مابین ایک مہم تھی ، جو سن 1937 میں سرکاری طور پر دوسری چین-جاپان جنگ کے آغاز سے پہلے ہی چلائی گئی تھی۔ اسے جاپانی Operation Nekka کے طور پر اور ہوپئی کی پہلی جنگ کے طور پر کئی انگریزی کے ...

                                               

الحمرا کے افسانے

ممتازادیب غلام عباس نے 1930ء میں امریکی لکھاری واشنگٹن ارونگ کی کتاب" Tales of the Alhambra” کا آزاد اردو ترجمہ ”الحمرا کے افسانے" کے عنوان سے کیا تھا۔ اس پر معروف ڈراما نویس اوراس کتاب کے ناشر امتیاز علی تاج نے دیباچے میں لکھا: ”آج سے ایک صدی قب ...

                                               

ٹروجیروشیکا

ٹروجیروشیکا یا دست ثلاثہ کے متعلق ایک روایت مشہور ہے کہ یوحنا دمشقی کا جب دایاں ہاتھ اموی خلیفہ کے حکم سے کاٹ دیا گیا تو یوحنا نے تھیوتوکوس سے دعا مانگی اور اس کا ہاتھ دوبارہ واپس آ گیا۔ کہا جاتا ہے کہ یوحنا نے اس معجزاتی شفایابی کے بعد شکر گزاری ...

                                               

کتشاوہ مسجد

کتشاوہ مسجد ایک الجزائر کے دارالحکومت الجزائر میں ایک مسجد ہے۔ یہ مسجد سترہویں صدی میں عثمانی دور میں تعمیر کیا گئی تھی اور قصبہ کے دامن میں واقع ہے جو یونیسکو کے عالمی ثقافتی ورثہ میں شامل ہے۔ یہ مسجد جو قصبہ کی بہت سی کھڑی سیڑھیوں کے پہلے حصے پ ...

                                               

تاشقند ٹاور

تاشقند ٹیلی ویژن ٹاور ایک 375-میٹر-high ٹاور ، تاشقند ، ازبکستان میں واقع ہے اور دنیا کا 11 واں بلند ترین ٹاور ہے۔ تعمیر کا کام 1978 میں شروع ہوا اور اس نے 6 سال بعد ، 15 جنوری 1985 کو کام شروع کیا۔ 1985 سے 1991 تک یہ دنیا کا چوتھا بلند ٹاور تھا۔ ...

                                               

شہداء اسکوائر تاشقند

شہداء اسکوائر ، جسے آزادی اسکوائر بھی کہا جاتا ہے ، تاشقند ، ازبکستان میں واقع ایک تاریخی یادگار ہے۔ چوک 20 ویں صدی کے دوران زارسٹ اور سوویت استعمار کے متاثرین کی یاد کے لئے تعمیر کیا گیا تھا۔ اس میں وہ لوگ شامل ہیں جنہیں عوام کے دشمن کے طور پر ن ...

                                               

مقبرہ شیخ زین الدین

شیخ زین الدین بابا کا مقبرہ تاشقند ، ازبکستان میں واقع ہے۔ شیخ زین الدین بابا سہروردیہ صوفی کے ایک مصنف اور روحانی شخصیت تھے. ان کی پیدائش کی صحیح تاریخ معلوم نہیں ہے۔ یہ خیال کیا جاتا ہے کہ شیخ زین الدین کا انتقال اس وقت ہوا جب وہ 95 سال کے تھے۔ ...

                                               

چارسو بازار

چارسو بازار ، جسے چارسو بازار بھی کہا جاتا ہے ، روایتی بازار ہے جو ازبکستان کے دارالحکومت شہر تاشقند کے پرانے قصبے کے وسط میں واقع ہے۔ اس کی نیلی رنگ کی گنبد عمارت اور اس سے ملحقہ علاقوں کے نیچے ، روز مرہ کی تمام ضروریات کو فروخت کیا جاتا ہے۔

                                               

شاہ فہد فوارہ

شاہ فہد فوارہ جسے جدہ فوارہ بھی کہا جاتا ہے جدہ کی ساحلی پٹی کورنیش جدہ پر واقع ایک فوارہ ہے۔ یہ دنیا کا بلند ترین فوارہ ہے۔ یہ فوارہ جدہ شہر کو شاہ فہد بن عبدالعزیز آل سعود نے عطیہ کیا تھا اسے لیے اس فوارے کو ان کے نام سے منسوب کیا جاتا ہے۔ یہ 1 ...

                                               

اچھرہ

اچھرہ لاہور، پنجاب، پاکستان میں ایک تجارتی اور رہائشی علاقہ ہے۔ قدیم علاقہ ہونے کی وجہ سے علاقہ میں کئی قدیم عمارات دیکھی جا سکتی ہیں۔بھیرو کا استھان اسی علاقہ میں ہے اچھرہ کافی مشاہیر و علما کا مسکن رہا ہے چند نامی گرامی شخصیات جن کا تعلق اچھرہ ...

                                               

ایم عالم روڈ

ایم عالم روڈ لاہور، پنجاب میں ایک اہم سڑک ہے جسے پاک فضائیہ کے ریٹائرڈ بہترین ہواباز محمد محمود عالم کے اعزاز میں نام دیا گیا ہے۔ یہ مین مارکیٹ گلبرگ سے فردوس مارکیٹ گلبرگ تک ہے۔ یہ سڑک مشہور مین بلیوارڈ کے متوازی چلتی ہے جس پر بہت سے ریستوران، ف ...

                                               

سرو والا مقبرہ

سرو والا مقبرہ یا مقبرہ شرف النساء بیگم پورہ میں واقع ایک مقبرہ ہے جو لاہور، پاکستان میں واقع ہے۔ مقبرہ دائی انگہ کے گلابی باغ کے قریب جی ٹی روڈ کے مشرق میں واقع ہے۔ یہ مغل شہنشاہ محمد شاہ کے عہدِ حکومت میں لاہور کے مغل صوبے دار نواب زکریا خان کی ...

                                               

فورٹ روڈ فوڈ اسٹریٹ

فورٹ روڈ فوڈ اسٹریٹ اندرون لاہور شہر میں فورٹ روڈ پر واقع ایک فوڈ اسٹریٹ ہے۔ یہ بادشاہی مسجد کے عقب میں واقع ہے۔ اس کا افتتاح 21 جنوری، 2012ء کو حمزہ شہباز شریف نے کیا، جس کا مقصد گوالمنڈی فوڈ اسٹریٹ کا ایک متبادل فراہم کرنا تھا۔

                                               

مقبرہ انارکلی

مقبرہ انارکلی لاہور، پنجاب، پاکستان میں واقع مغل دور کی ایک ہشت ضِلعی یادگار ہے۔ انارکلی کا مقبرہ اردو: مقبره انارکلی پاکستانی صوبہ پنجاب کے صدر مقام لاہور میں 16 ویں صدی کی مغل یادگار ہے۔ انارکلی کا مقبرہ والڈ سٹی لاہور کے جنوب مغرب میں ، برطانو ...

                                               

مقبرہ خان جہاں بہادر کوکلتاش

مقبرہ خانِ جہاں بہادر کوکلتاش محلہ گنج، نزد لاہور نہر، لاہور میں واقع ہے جو سترہویں صدی عیسوی میں اورنگزیب عالمگیر کے عہدِ حکومت کے آخری سالوں میں تعمیر کیا گیا۔ یہ مقبرہ اورنگزیب عالمگیر کے عہد میں لاہور میں تعمیر کیے جانے والے آخری مقابر میں سے ہے۔

                                               

مقبرہ دائی انگہ

مقبرہ دائی انگہ جسے گلابی باغ بھی کہا جاتا ہے موجودہ دور میں پاکستان کے صوبہ پنجاب کے دار الحکومت لاہور کے قدیم شہر سے باہر بیگم پورہ میں واقع ایک مقبرہ ہے۔

                                               

مقبرہ علی مردان خان

مقبرہ علی مردان خان علی مردان خان کا مقبرہ ہے جو لاہور میں 1630 کی دہائی میں تعمیر کیا گیا۔علی مردان خان ایک کرد تھا جو مغلیہ دربار میں آنے سے قبل صفوی سلطنت کے شاہ صفی کے دربار میں تھا۔ مقبرہ علی مردان خان سنگھ پورہ پرانی سبزی منڈی, نزد لوکو جنر ...

                                               

مقبرہ نادرہ بیگم

مقبرہ نادرہ بیگم نادرہ بانو بیگم کا مقبرہ ہے جو مغل شہزادے داراشکوہ کی بیوی تھی۔ یہ مقبرہ لاہور میں حضرت میاں میر کے مزار کے مشرقی سمت میں واقع ہے۔ 1658ء میں دارا شکوہ نے بادشاہت کا اعلان کیا تو اورنگ زیب نے بھی خود کو شہنشاہ ہند کا خطاب دیا اورا ...

                                               

مقبرہ نور جہاں

مقبرہ نور جہاں شاہدره باغ، پنجاب، پاکستان میں واقع ایک مقبرہ ہے۔ اسے مغل شہنشاہ نورالدین جہانگیر کی ملکہ نورجہاں کے لیے تعمیر کروایا گیا تھا۔

                                               

چو برجی

چو برجی تاریخی شہر لاہور میں ملتان کی جانب جانے والی سڑک پر مغلیہ باغات میں وسیع ترین باغ کے دروازے کی حیثیت سے تعمیر شدہ ایک تاریخی عمارت ہے۔ چوبرجی دراصل مغلیہ باغات میں انتہائی ممتاز اور وسیع ترین باغ کا دروازہ تھا جو مغل شہزادی زیب النساء سے ...

                                               

ہاکس بے

کراچی سے کئی کلومیٹر دور ایک پر سکون ساحلی مقام ہے جہاں تفریح کے لیے ہٹ بھی دستیاب ہیں۔ یہ مقام بھی کئی حصوں پر مشتمل ہے جن میں نیلم پوائنٹ پیراڈائز پوائنٹ زیادہ مشہور ہیں۔ ہاکس بے کا ساحلی پٹی منوڑہ سے شروع اور عمالیہ پر اختتام ہوتا ہے. جس میں ٹ ...

                                               

استنبول ہوائی اڈا

استنبول ہوائی اڈا استنبول، ترکی کا بنیادی بین الاقوامی ہوائی اڈا ہے۔ یہ ضلع ارناوتکوئے شہر کے یورپی حصے میں واقع ہے۔ تمام شیڈول تجارتی مسافر پروازیں 6 اپریل، 2019ء کو استنبول اتاترک ہوائی اڈا سے استنبول ہوائی اڈے پر منتقل کردی گئیں۔

                                               

بیجنگ دار الحکومت بین الاقوامی ہوائی اڈا

بیجنگ دار الحکومت بین الاقوامی ہوائی اڈا یا بیجنگ کیپٹل انٹرنیشنل ایئرپورٹ بیجنگ کا بنیادی بین الاقوامی ہوائی اڈا ہے۔ یہ بیجنگ کے شہر کے مرکز کے شمال مشرق میں 32 کلومیٹر کے فاصلے پر ضلع چیاویانگ کے ایک محصورہ میں واقع ہے۔ اس محصورہ علاقے کے ارد گ ...

                                               

سوکارنو-ہاتا بین الاقوامی ہوائی اڈا

سوکارنو-ہاتا بین الاقوامی ہوائی اڈا, مخفف SHIA) جکارتا عظمی، جاوا، انڈونیشیا میں مرکزی ہوائی اڈا ہے۔

                                               

اوکلینڈ انٹرنیشنل ہوائی اڈا

اوکلینڈ انٹرنیشنل ہوائی اڈا ریاستہائے متحدہ امریکا کا ایک ہوائی اڈا اور بین الاقوامی ہوائی اڈا جو اوکلینڈ، کیلیفورنیا میں واقع ہے۔

                                               

سان فرانسسکو انٹرنیشنل ہوائی اڈا

سان فرانسسکو انٹرنیشنل ہوائی اڈا ریاستہائے متحدہ امریکا کا ایک بین الاقوامی ہوائی اڈا جو سان ماتیو کاؤنٹی، کیلیفورنیا میں واقع ہے۔

                                               

سان کارلوس ہوائی اڈا (کیلیفورنیا)

سان کارلوس ہوائی اڈا) ریاستہائے متحدہ امریکا کا ایک ہوائی اڈا جو سان ماتیو کاؤنٹی، کیلیفورنیا میں واقع ہے۔

Free and no ads
no need to download or install

Pino - logical board game which is based on tactics and strategy. In general this is a remix of chess, checkers and corners. The game develops imagination, concentration, teaches how to solve tasks, plan their own actions and of course to think logically. It does not matter how much pieces you have, the main thing is how they are placement!

online intellectual game →